مشہور اداکارہ شبنم کی پاکستان واپسی

پاکستانی عوام باالخصوص فلمی شائقین کے لئے خوشخبری ہے کہ نامور اداکارہ شبنم نے پاکستان واپس منتقل ہونے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ پاکستان فلم انڈسٹری پر طویل عرصے تک راج کرنے والی خوبصورت اداکارہ شبنم کئی برس قبل ایک افسوسناک واقعہ کے بعد پاکستان کو خیر باد کہہ کر اپنے شوہر کے ہمراہ اپنے آبائی ملک بنگلہ دیش منتقل ہو گئی تھی۔ لیکن طویل عرصے کے بعد اداکارہ شبنم نے اپنی آئندہ زندگی میں ایک مرتبہ پھر پاکستان میں گزارنے کا فیصلہ کر لیا ہے اور وہ گیارہ جولائی کو پاکستان پہنچ گئی ہیں شبنم کے ایک قریبی ذرائع کے مطابق انہوں نے پاکستان کے شہر کراچی میں اپنے لئے گھر بھی لے لیا ہے وہ پاکستان منتقل ہونے کے بعد کراچی میں قیام کریں گی ۔آج سے دو برس پہلے بھی وہ پاکستان آئی تھی لیکن مختصر قیام کے بعد واپس چلی گئی تھی لیکن اس مرتبہ وہ کراچی میں مستقل طور پر رہنے آرہی ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ پاکستان میں مجھے ہمیشہ بہت پیار ملا پاکستان کو اپنا دوسرا گھر سمجھتی ہو۔


شبنم کی پہلی اردو فلم انیس سو باسٹھ میں چندہ کے نام سے آئی تھی اس کے بعد ان کی یادگار فلموں میں آئینہ بندش شمع اور پروانہ دہشت عندلیب اور دیگر بے شمار فلمیں شامل ہیں۔ شبنم نے اپنے بہترین دور میں پاکستان کے نامور اداکاروں محمد علی شاہد وحید مراد ندیم کے ساتھ بطور ہیروئن کام کیا اور فلمی شائقین سے زبردست داد وصول کی۔ اداکارہ شبنم نے اردو فلموں کے ساتھ ساتھ بنگالی اور پنجابی فلموں میں بھی کام کیا انہوں نے 160 فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے جن میں 152 اردو چودہ بنگالی اور چار پنجابی فلم تھی۔ یہ بات انتہائی افسوسناک ہے کہ انہیں پاکستان میں جنسی درندگی کا نشانہ بنایا گیا تھا جس کے بعد وہ بنگلہ دیش منتقل ہو گئی تھی اداکارہ شبنم کے ساتھ ہونے والی زیادتی کے اس کے بعد عدالت نے پانچ مرکزی ملزمان کو سزائے موت سنائی تھی لیکن بعدازاں اداکارہ شبنم نے دباؤ کے باعث ملزمان کو معاف کردیا تھا اور خود بیرون ملک منتقل ہو گئی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں