ملک میں مارشل لا لگ جائے گا ۔ مسلم لیگ نون نے آنے والے حالات کا اشارہ دے دیا

پاکستان مسلم لیگ نون نے خبردار کیا ہے کہ اگلے سال پاکستان میں مارشل لاء لگ جائے گا ۔ پاکستان میں سب سے پہلا مارشل لاء انیس سو اٹھاون میں ایوب خان نے لگایا تھا ۔ ۔ایوب خان کے بعد پاکستان میں جنرل یحییٰ خان ۔جنرل ضیاء الحق اور پھر جنرل پرویز مشرف جیسے فوجی دور گزرے ۔ ایوب خان کے طویل مارشل لاء کے بعد جنرل یحییٰ کے دور میں پاکستان دولخت ہوگیا تھا مشرقی پاکستان ہم سے الگ ہو کر بنگلہ دیش بن گیا اور دشمن ملک بھارت پاکستان کو تقسیم کرنے میں کامیاب ہوگیا تھا ۔ مسلم لیگ نون نے خبردار کیا ہے کہ پاکستان کے حالات ایک مرتبہ پھر ایک اور مارشل لا کی طرف بڑھ رہے ہیں ۔ پاکستان مسلم لیگ نون کے دو اہم رہنماؤں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور سابق وزیر داخلہ احسن اقبال کا کہنا ہے کہ ملک جس تیزی سے بحران کی جانب بڑھ رہا ہے اگلے سال ہمارے پاس اور کوئی چوائس نہیں رہ جائے گی سوائے اس کے کہ ہم ٹرم الیکشن کے طرف جائیں اگر ملک کو کسی بڑے بحران سے بچانا ہے تو 2020 کو الیکشن کا سال بنانا پڑے گا دوسری صورت میں یہاں مارشل لاء لگایا جائے گا یا پھر کوئی غیرجمہوری مداخلت ہوگی ۔ احسن اقبال اور شاید خاقان عباسی نے جن خطرات کا اشارہ کیا ۔یہ باتیں ماضی کے مارشل لاء لگنے سے پہلے بھی سیاستدان کرتے رہے ہیں ۔ آج پھر پاکستان کے سیاستدان مارشل لا کے بارے میں سوچنے پر مجبور ہوگئے ہیں تو سوچنا چاہیے ایسا کیوں ہے ؟


سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ آج جو حلات ہیں ماضی میں ایسا جب جب ہوا تو مارشل لاء لگا ۔
مسلم لیگی رہنماوں کا کہنا ہے کہ حکومت جب خود جمہوری نظام کو مفلوج کر دے اور اس پر یقین نہ رکھے تو اس کے علاوہ حکومت جب وہ پوزیشن پر حملہ کرتی ہے تو خراب صورت حال پیدا ہوجاتی ہے جس کے نتیجے میں مارشل لاء لگنے کا امکان ہوتا ہے ماضی میں ہمارے ملک میں جو مارشل لا لگے وہ ایسے ہی حالات کی وجہ سے لگے تھے اس لئے حکومت کو چاہیے کہ ہوش کے ناخن لیں اور پارلیمنٹ کو چلائیں ۔


دوسری طرف پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں کا کہنا ہے کے نون لیگ کے رہنما اپنی قیادت کی گرفتاری سے بوکھلا گئے ہیں ان کی کرپشن پکڑی جارہی ہے تو نے جمہوریت خطرے میں نظر آرہی ہے ملک میں کسی غیر جمہوری مداخلت کا کوئی امکان نہیں ہے وفاقی اور صوبائی حکومتیں بالکل نارمل انداز سے کام کررہی ہیں معیشت کے لیے مسائل ضرور ہیں لیکن ملک میں کوئی بحران نہیں ہے وزیراعظم عمران خان پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ وہ کسی چور اور ڈاکو کو نااہل دیں گے نہ ڈیل کریں گے بلکہ ایک ایک کرکے سب کو پکڑیں گے اور جیلوں میں ڈالیں گے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں