شہباز شریف کی نمبر ون سے ڈیل ہوگئی تھی لیکن نواز شریف کا انکار رکاوٹ بن گیا

پاکستان مسلم لیگ نون کی اعلی قیادت کو ریلیف دینے کے لیے پی ٹی آئی اور نون لیگ کی اہم شخصیات کے درمیان ڈیل ہوگئی تھی شہباز شریف نے نمبرون کے ساتھ معاملات طے کرلیے تھے صورتحال میں بہتری آرہی تھی شہباز شریف کا بیرون ملک جانا بھی اسی ڈیل کا ایک حصہ تھا لیکن پھر نواز شریف کے انکار نے ڈیل کی کامیابی میں رکاوٹ پیدا کر دی اور شہباز شریف کی نمبرون کے ساتھ ڈیل کی تمام کوششوں پر پانی پھر گیا ان رابطوں اور کوششوں میں شہباز شریف کی اہلیہ تہمینہ درانی کا بھی اہم کردار رہا۔
سینئر ٹی وی اینکر اور تجزیہ کار ڈاکٹر شاہد مسعود نے اس حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ کوئی مانے یا نہ مانے ڈیل ہوگئی تھی اور اس ڈیل کے نتیجے میں تحریک انصاف کی حکومت میں شہباز شریف پنجاب کے وزیر اعلیٰ بننے والے تھے شہباز شریف اور حمزہ شہباز نے اس حوالے سے تیاریاں شروع کردی تھیں لیکن مسلم لیگ نون کے قائد نواز شریف کا انکار رکاوٹ بن گیا۔



بعض سیاسی مبصرین کا کہنا ہے کہ نواز شریف نے شروع دن سے ہی کسی بھی قسم کی ڈیل کی سخت مخالفت کر رکھی تھی اور ایسی کوششیں ان کی منظوری کے بغیر آگے بڑھائی جا رہی تھی جیسے ہی نواشریف کو علم ہوا انھوں نے ناراضگی کا اظہار کیا اور انکار کردیا جس کے بعد سب کوششیں رک گئیں۔تاحال شہباز شریف کی اہلیہ اور شہباز شریف خود معاملات کو بہتر بنانے کے لیے کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں۔
نواز شریف نے واضح طور پر مریم نواز کو نائب صدر بنا کر اپنا فیصلہ بھی سنا دیا ہے اور اپنے سیاسی مخالفین کو واضح پیغام بھی دے دیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں