نوازشریف عید سے پہلے لندن جا سکیں گے نئی درخواست ضمانت تیار

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضمانت کے لئے پاکستان مسلم لیگ نون نے نئی حکمت عملی وضع کر لی ہے ۔ضمانت کے حصول کے لئے اب اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ سابق وزیراعظم نواز شریف کے قریبی ذرائع کے مطابق جیل واپس جانے سے قبل انہوں نے اپنے قانونی مشیروں سے طویل مشاورت کی جس میں یہ طے پایا کہ رمضان کے دوسرے عشرے میں اسلام آباد ہائی کورٹ میں ان کی ضمانت کے لئے درخواست دائر کردی جائے گی جبکہ عدالت سے العزیزیہ ریفرنس میں سزا ختم کرنے کی درخواست بھی کی جائے گی نواز شریف کی قانونی ٹیم کے سربراہ خواجہ حارث نے اس حوالے سے اپنی تیاری شروع کر رکھی ہے سپریم کورٹ کی طرف سے نظر ثانی اپیل کا تحریری فیصلہ آنے کے بعد اس کے نقاط کو دیکھ کر نہیں درخواست تیار ہوگی ۔یاد رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ میں ال عزیزیہ سٹیل میں ریفرنس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی سزا کے خلاف مرکزی اپیل کی سماعت دو رکنی بینچ نے 21 جون تک ملتوی کردی ہے یہ تاریخ بھی خواجہ حارث کے کہنے پر رکھی گئی ۔


پارٹی ذرائع کے مطابق قانونی مشیر اور امید ہے کہ نوازشریف کو دوسری درخواست ضمانت میں ہائیکورٹ سے ریلیف مل سکتا ہے ایسی صورت میں انہیں بیرون ملک علاج کیلئے جانے کی درخواست بھی کی جائے گی اور اگر انہیں بیرون ملک جانے کی اجازت ملتی ہے تو وہ عید سے پہلے لندن جا سکیں گے ۔لیکن اس کا انحصار سو فیصدی عدالتی حکم نامے پر اور نواز شریف کی میڈیکل رپورٹس پر ہوگا ۔وکلاہ انہیں زیادہ سے زیادہ ریلیف دلانے کی کوشش کریں گے ۔


سیاسی مبصرین کے مطابق اگر نوازشریف نے قانونی محاذ پر ریلیف حاصل کرنا ہے تو پھر رمضان المبارک کے دوران ان کی پارٹی کی جانب سے خاموشی یا نرم پالیسی دیکھنے کو ملے گی حالانکہ ان کی پارٹی کے اندر دباؤ بڑھتا جا رہا ہے کہ اب حکومت کو زیادہ نرم پولیسی نہ دی جائے اور سخت گیر پالیسی اور رویہ اختیار کیا جائے اور حکومت بہت زبردست دباؤ کا شکار بنایا جائے ورنہ عوام اپوزیشن جماعتوں سے بھی نالاں ہو جائیں گے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں