پاکستان کے نئے چیئرمین ایف بی آر سید شبر زیدی کا نام ای سی ایل میں شامل کا انکشاف

پاکستان کے نئے چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو FBR سید شبر زیدی کا نام بھی ایگزیکٹ کنٹرول لسٹ ECL میں شامل ہونے کا انکشاف ہوا ہے قومی احتساب بیورو NAB کی جانب سے وفاقی وزارت داخلہ کو لکھا گیا وہ خط بھی سامنے آگیا ہے جس میں سیریل نمبر تین پر شبر زیدی کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کے لئے کہا گیا تھا کیونکہ ان کا نام بھی ان ملزمان میں شامل تھا جن کے خلاف کسب بینکKASB بینک اسلامیBANK ISLAMI اور اسٹیٹ بینک کے حوالے سے تحقیقات ہورہی تھی ۔شبر زیدی کا نام سینئر پارٹنر اے ایف فرگوسن اینڈ کمپنی ہونے کی وجہ سے شامل کیا گیا تھا۔شبر زیدی کے ساتھ ساتھ اسٹیٹ بینک کے سابق گورنر اشرف محمود وتھرا ۔بینک اسلامی کے صدر حسن عزیز بلگرامی ۔فرگوسن کمپنی کے حسن نظیر اور ایک اور ملزم عاصم سلیم کے نام بھی شامل تھے۔ یاد رہے کہ سید شبر زیدی کو پی ٹی آئی کی حکومت نے چیئرمین ایف بی آر بنایا ہے ان کا انتخاب خود وزیراعظم عمران خان نے منظوری دی ۔شبر زیدی 2013 میں نگران حکومت میں وزیر بھی رہ چکے ہیں وہ فرگوسن اینڈ کمپنی کے سینئر پارٹنر ہیں انہوں نے جو نمایاں کتابیں لکھی ہیں ان میں پانامہ لیکس Panama Leaks اور پاکستانی شہریوں کے آف شور اثاثے نمایاں ہے۔ٹیکسیشن کے حوالے سے شبر زیدی ایک بڑا نام ہے ان کی بڑی خدمات ہیں۔



شبرزیدی سندھ انسٹیٹیوٹ آف یورالوجی اینڈ ٹرانسپلانٹیشن SIUT اور لیاقت نیشنل اسپتال کراچی کے بورڈ آف گورنرز اور ٹرسٹی میں شامل ہیں یوں وہ سماجی خدمات میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں۔
پاکستان میں اہم عہدوں پر آنے والی شخصیات کا نام ای سی ایل میں آنا اب کوئی حیرت کی بات نہیں رہی بلکہ ایک فیشن بن چکا ہے۔نئے چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی کا نام ای سی ایل میں شامل ہونا اپنی جگہ اہمیت کا حامل ضرور ہے لیکن ہم اس ملک میں رہ رہے ہیں جہاں صوبے کے وزیر اعلیٰ سید مراد علی شاہ   کا نام بھی ای سی ایل میں ہے یہاں سیاسی جماعتوں کے سربراہ بھی ای سی ایل میں شامل ہیں ۔جہاں نیب کی تحقیقات وزیراعظم سے لے کر مختلف وزیروں تک ہو رہی ہے۔


[supsystic-gallery id=97]

اپنا تبصرہ بھیجیں