سندھ کی تقسیم … گورنر سندھ عمران اسماعیل کو شدید تنقید کا سامنا

سندھ کی تقسیم کے حوالے سے گورنر سندھ عمران اسماعیل نے جو بیان دیا ہے اس کی وجہ سے وہ سوشل میڈیا پر شدید تنقید کی زد میں آ چکے ہیں سندھ کو تقسیم کرکے نیا صوبہ بنانے کی حمایت کرنے پر گورنر سندھ عمران اسماعیل اور پی ٹی آئی کی قیادت تنقید کی زد میں ہے سوشل میڈیا پر گورنر سندھ عمران اسماعیل کو ہٹاؤ … کا ٹرینڈ بنایا گیا ہے جس پر گورنر سندھ کے خلاف کافی تبصرے سامنے آرہے ہیں عمران اسماعیل اور پی ٹی آئی کو سندھ دشمن قرار دیا جا رہا ہے تبصرہ کرنے والوں نے اس بات پر حیرت کا اظہار کیا ہے کہ جو شخص جس صوبے کا گورنر ہے اسی صوبے کی تقسیم کی بات کر رہا ہے ۔


زیادہ تر تبصرے عمران اسماعیل اور پی ٹی آئی کے خلاف ہیں جبکہ عمران اسماعیل اور پی ٹی آئی کی حمایت میں بھی کچھ لوگوں نے تبصرے کئے ہیں سوشل میڈیا پر عمران اسماعیل کے بیان کے بعد خاص طور پر پیپلز پارٹی اور پی ٹی آئی کے حامیوں کے درمیان ایک دوسرے پر اجمل بازی شروع ہو گئی ہے پی ٹی آئی کے حامیوں کا کہنا ہے کہ پنجاب و سندھ بڑے صوبے ہیں ان کو تقسیم کرکے نئے صوبے بنانے چاہیے جبکہ سندھ سے تعلق رکھنے والے طوسی نگاروں نے سندھ سردی کی تقسیم نامنظور کا نعرہ دیا ہے عمران اسماعیل کے خلاف سخت جملے لکھے ہیں بس افسانہ نگاروں نے اسے اصل موضوع سے توجہ ہٹانے کے لئے ایک نئی بحث قرار دیا ہے جس کا حاصل کچھ نہیں ہونا صرف مہنگائی سے توجہ ہٹانے کے لئے یہ بحث چھڑنے کا کھا گیا ہے ۔


متنازعہ بیان پر عمران اسمعیل کی مشکلات میں اضافہ، جی ڈی اے نے گورنر سندھ کی تبدیلی کا مطالبہ کردیا، تحریک انصاف کی اتحادی جماعت جی ڈی اے نے بھی عمران اسمعیل کے بیان کی مخالفت کردی۔ جی ڈی اے کی رکن سندھ اسمبلی نصرت سحر عباسی نے گورنر کی تبدیلی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ  عمران خان ایسی سوچ رکھنے والے گورنر کو ہٹاکر سندھ سے محبت کرنے والے شخص کو اس عہدے پر رکھے۔ جب تک ایک بھی سندھی زندہ ہے سندھ کبھی 2  ہو ہی نہیں سکتے ، گورنر سندھ کو شاید ہما رے جنون کا اندازہ ہی نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں