اسد عمر پہاڑ سے اتر آئے

وزیراعظم عمران خان نے اپنے انتہائی بااعتماد ساتھی اسد عمر کو راضی کر لیا ہے اور اسد عمر ناراضگی کے پہاڑ سے نیچے اتر آئے ہیں وزارت خزانہ چھوڑنے کے بعد انہوں نے جو پریس کانفرنس کی تھی اور قومی اسمبلی میں ایک تقریر کی تھی اس کے بعد وہ خود پر لائیکس کرنے کے لیے پہاڑوں پر چلے گئے تھے جہاں سے انہوں نے اپنی کچھ تصویریں بھی ساتھیوں اور دوستوں کے ساتھ شیئر کی تھی ۔اس دوران پی ٹی آئی کے مختلف دوست انہیں کابینہ میں واپس لانے کے لیے کوششیں کرتے رہے اور پی ٹی آئی کے علاوہ شیخ رشید احمد نے بھی اسد عمر کو منانے اور کابینہ میں واپس آنے کی درخواست کی تھی ۔


عمران خان بھی اسد عمر کے وزارت خزانہ سے علیحدہ ہونے اور وزارت پٹرولیم قلمدان سنبھالنے کی پیشکش سے معذرت کرنے کی وجہ سے اداس بتائے جاتے تھے اور وزیراعظم ہاؤس میں اسد عمر کے جانے کے بعد عجیب طرح کی ویرانی اور اداسی دیکھی گئی تھی اس لیے یہ کوشش ہو رہی تھی کہ اسد عمر کو بنایا جائے اور وہ کبھی نہ میں واپس آئیں گزشتہ روز یہ پیش گوئی کے وزیراعظم اور اسد عمر کے درمیان ملاقات ہوئی جس میں وزیراعظم نے اسد عمر کو کبھی نہ میں واپس آنے کے لیے کہا اور اسد عمر نے اپنے خدشات کا اظہار کیا دونوں کے درمیان کھل کر بات چیت ہوئی ہے اور ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے اسد عمر کو راضی کر لیا ہے وہ صرف پہاڑوں سے ہی نیچے نہیں آئے بلکہ ناراضگی کے پہاڑ سے بھی نیچے آگئے ذرائع کا کہنا ہے کہ بہت جلد اسد عمر کی کابینہ میں واپسی کی خوشخبری پی ٹی آئی کے کارکنوں کو ملنے والی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں