نواز شریف کو جیل میں نیا قیدی نمبر الاٹ کرنے کا فیصلہ ۔ قیام پہلے والی بیرک میں ہی ہوگا

کوٹ لکھپت جیل لاہور کے ذرائع کے مطابق اب سابق وزیراعظم نواز شریف کو ایک مرتبہ پھر جیل میں واپس آنے کے بعد نیا قیدی نمبر الاٹ کیا جائے گا البتہ ان کا قیام اسی بیرک میں ہوگا جہاں انہیں ضمانت پر رہائی سے پہلے رکھا گیا تھا جیل میں سابق وزیراعظم کو بھی کلاس کی سہولتیں حاصل رہیں گی جن کے مطابق دو کرسیاں ایک چارپائی اخبار کے مطالعہ کی اجازت ٹی وی دیکھنے کا انتظام میٹرس اور فریج وغیرہ کی سہولت فراہم کی جائے گی ۔جیل حکام نے سابق وزیراعظم نوازشریف کی جیل واپسی کے حوالے سے اپنا حفاظتی کلین بھی تیار کرلیا ہے مسلم لیگ نون کے ذرائع کے مطابق نواز شریف کل شام 6 بجے سے پہلے کوٹ لکھپت جیل پہنچ جائیں گے تاکہ جیل رولز کے مطابق بیرکس بند ہونے سے پہلے وہ بطور قیدی جیل کے اندر شمار کئے جائیں۔
سابق وزیراعظم نواز شریف آج پہلا روزہ جیل میں ہی افطار کریں گے سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو 26 مارچ کو چھ ہفتے کے لیے طبی بنیاد پر عبوری ضمانت دی تھی جس کی مدت ساتویں کو ختم ہورہی ہے اور یہ ذرائع کے مطابق لیگی قیادت اور نوازشریف کو یہ پیغام پہنچا دیا گیا کہ وہ سات مئی کی شام چھ بجے سے پہلے کوٹ لکھپت جیل پہنچ جائیں۔


یاد رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف جیل جانے کے لیے خود برطانیہ سے پاکستان کا سفر کر کے آئے تھے اور ان کے ہمراہ ان کی صاحبزادی مریم نواز بھی لندن سے پاکستان پہنچی تھی اور ایئرپورٹ سے باپ بیٹی کو گرفتار کرکے جیل پہنچایا گیا تھا ۔سیاسی تاریخ میں ایسی مثالیں بہت کم ملتی ہیں کہ کوئی سیاستدان گرفتاری دینے کے لیے بیرون ملک سے پاکستان واپس آئے اور ایئرپورٹ سے گرفتار ہوکر سیدھا جیل چلا جائے ۔یہ تاریخ بھی خود سابق وزیراعظم نواز شریف نہیں رقم کی ہے ورنہ ماضی میں بہت سے سیاستدانوں نے گرفتاری سے بچنے کے لئے خود ساختہ جلاوطنی اختیار کی اور کئی سال تک بیرون ملک بیٹھے رہے جن میں سابق وزیر اعظم بینظیر بھٹو سمیت سیاست کے بڑے بڑے نام شامل ہیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں