وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی تکلیف پر خواجہ آصف نے علاج تجویز کر دیا

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے پاکستان مسلم لیگ نون کی نائب صدر مریم نواز کو عدالتی سزا کے باوجود پارٹی عہدہ دیے جانے پر کی جانے والی تنقید کا سابق وزیر خارجہ خواجہ آصف نے جواب دیا ہے۔
خواجہ آصف کہتے ہیں کہ قریشی صاحب آپ جہانگیرترین کا تو کچھ کر نہیں سکے جن کی نااہلی پر نظرثانی کی درخواست مسترد ہوچکی ہے اور آپ کو مریم نواز کو مسلم لیگ نون کی نائب صدر بنانے پر تکلیف ہے حالانکہ ان کی سزا معطل ہوچکی ہے۔
خواجہ آصف نے مزید کہا ہے کہ آپ جہانگیرترین کا تو کچھ کر نہیں سکے جہانگیر ترین تو عمران خان کے ساتھ بیٹھے تھے حالانکہ نااہلی پر نظرثانی کی درخواست ان کی مسترد ہو چکی ہے۔
خواجہ آصف نے اسی پر بس نہیں کی بلکہ مزیدکہتےہیں قریشی صاحب کا نواز شریف 8سال لیڈر رہا۔
قریشی صاحب کوئی …ہوتی ہے کوئی … ہوتی ہے.


یادرہے کہ شاہ محمود قریشی نے بیان دیا تھا کہ سزایافتہ مریم نواز کو کسی سیاسی جماعت کا نائب صدر کیسے بنایا جاسکتا ہے مریم نواز کو عدالت نے نااہل قرار دیا تھا مسلم لیگ ضرور اپنی پارٹی کے اندر عہدوں میں رد و بدل کرے لیکن کچھ قاعدے قانون ہوتے ہیں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مریم نواز کو مسلم لیگ نون کا نائب صدر بنائے جانے پر تنقید کی تھی جس کا جواب سابق وزیر خارجہ اور پاکستان مسلم لیگ نون کے اہم رہنما خواجہ آصف نے دے دیا۔

سیاسی مبصرین پہلے ہی یہ بات کہہ رہے تھے کہ شاہ محمود قریشی نے بظاہر نام تو مریم نواز کا لیا ہے لیکن وہ چاہتے ہیں کہ جہانگیرترین کا پارٹی میں بڑھتا ہوا عمل دخل روک سکیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں