وزیراعلیٰ سندھ کی محکمہ انرجی کو تھر کول کے نئے پاور پروجیکٹس کے ریٹ مقرر کرنے کیلئے سمری بھیجنے کی ہدایت

کراچی –  وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے تھر کول مائن بلاک ٹو کی توسیع کےکام کو جلد مکمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ تھر انرجی لمیٹڈ اور تھل نووا پاور لمیٹڈ تھر میں 330 میگاواٹ کے مجموعی طور پر پانچ پاور پلانٹس لگائیں گے۔ ان میں سے 330 میگاواٹ کے دو پاور پلانٹس کا پہلے ہی افتتاح ہوچکا ہے جبکہ تین مزید پاور پلانٹس لگائے جائیں گے۔ انہوں نے یہ بات آج وزیراعلیٰ ہائوس میں تھر انرجی لمیٹڈ اور تھل نووا تھر کے درمیان سرمایہ کاری اور منصوبے مکمل کرنے کے حوالے سے منعقدہ ایک اہم اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔


اجلاس میں صوبائی وزیر توانائی امتیاز شیخ، وزیر آبپاشی سید ناصر شاہ، چیئرمین پی اینڈ ڈی ناہید شاہ، پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، سیکریٹری آبپاشی جمال شاہ، سیکریٹری فنانس، سیکریٹری انرجی مصدق خان، چیئرمین ہائوس آف حبیب علی حبیب، سی ای او حبکو خالد محمود، سی ای او ایس ای سی ایم سی خورشید جمالی نے شرکت کی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے محکمہ انرجی کو تھر کول کے نئے پاور پروجیکٹس کے ریٹ مقرر کرنے کیلئے سمری بھیجنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے محکمہ آبپاشی کو کول فیلڈ کو جلد پانی پہچانے کی بھی ہدایت کی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ تھر میں کوئلے سے بجلی کی پیداوار شروع ہونے سے ملک بالخصوص سندھ میں ترقی اور خوشحالی کے ایک نئے دور کا آغاز ہوگا۔ سندھ حکومت کی انتھک کوششوں کے نتیجے میں آج تھر کے کوئلے سے بجلی کی پیداوار ممکن ہو سکی ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہاکہ تھر میں سندھ حکومت کی فرینڈلی انویسٹمنٹ پالیسی کی بدولت سرمایہ کاری میں اضافہ ہوا ہے اور اس وقت مختلف ممالک کی کمپنیاں تھر میں کوئلےکی کان کنی اور کوئلے سے بجلی کی پیداوار کے لئے کوشاں ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں