سندھ بھر میں پبلک ہیلتھ انجنئیرنگ ( پی ایچ ای ) کے تحت جاری اسکیموں کو وقت مقررہ پر مکمل کیا جائے. سعید غنی

کراچی – وزیر بلدیات و پبلک ہیلتھ انجنئیرنگ سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ ۔ سندھ بھر میں فلٹریشن اور آر او پلانٹس پر جاری کاموں کو تیز کیا جائے اور جو آر او پلانٹس اپنی استدعات کے مطابق پانی فراہم نہیں کررہے ہیں ان کو ایک ہفتہ کے اندر اندر استدعات کے قابل بنایا جائے۔ نوابشاہ، تھرپارکر، مٹھی، عمر کوٹ سمیت دیگر علاقوں میں اپنے دورے کے دوران کچھ خامیوں کی نشاندہی کی ہے، ان کو دور کرکے رپورٹ پیش کی جائے اور آئندہ 10 روز کے بعد میں ان تمام علاقوں کا دوبارہ دورہ کرکے تمام خامیوں کا حل دیکھنا چاہتا ہوں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کے روز اپنے دفتر میں منعقدہ پبلک ہیلتھ انجنئیرنگ کے اجلاس کے صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری پی ایچ ای روشن علی شیخ، چیف انجنئیر سکھر شمش الدین شیخ، چیف انجنئیر حیدرآباد اکبر بلوچ اور دیگر اعلیٰ افسران بھی موجود تھے۔ صوبائی وزیر نے پی ایچ ای کے تحت صوبے بھر میں جاری تمام اسکیموں پر تفصیلی بریفنگ لی اور ان اسکیموں پر جاری کام کی رفتار کا جائزہ لیا۔ صوبائی وزیر کو بتایا گیا کہ صوبے میں پی ایچ ای کے تحت روان مالی سال کے لئے جو اسکیمیں بنائی گئی تھی ان کو اس مالی سال میں مکمل کرلیا جائے گا جبکہ تھرپارکر میں 100 سے زائد نئے آر او پلانٹ کی اسکیم جس کو 2021 تک مکمل ہونا ہے، ان کو بھی اسی سال جون 2019 میں مکمل کرلیا جائے گا۔


صوبائی وزیر کو سندھ کے تمام ڈسٹرکٹ میں جاری اسکیموں کے ساتھ ساتھ آئندہ مالی سال کے بجٹ میں شامل کرنے کے لئے اسکیموں پر بھی تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ اس موقع پر وزیر بلدیات و پی ایچ ای سعید غنی نے کہا کہ میں نے ہفتہ اور اتوار کے دو دنوں کے دوران لاڑکانہ، نوابشاہ، سکھر، تھرپارکر، مٹھی، عمر کوٹ سمیت دیگر اضلاع میں پبلک ہیلتھ کے تحت جاری اسکیموں کا جائزہ لیا ہے بالخصوص نوابشاہ میں فلٹریشن اور سیوریج کی اسکیموں کا معائنہ کیا ہے اور ان میں کچھ خامیوں کی بھی نشاندہی کی ہے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ میں نے تھرپارکر میں مٹھی کے مقام پر 20 لاکھ گیلن یومیہ پانی کے آر او پلانٹ کا بھی معائنہ کیا لیکن وہ پلانٹ ابھی بھی اپنی استدعات کے مطابق پورا پانی فراہم کرنے سے قاصر ہے۔ سعید غنی نے کہا کہ ان تمام خامیوں کو آئندہ ایک ہفتہ کے اندر اندر ختم کرکے تمام آر او اور فلٹریشن پلانٹس کو ان کی طے شدہ استدعات کے مطابق چلانے کے لئے تمام وسائل کو بروئے کار لایا جائے اور اس کی رپورٹ پیش کی جائے۔ انہوں نے سیکرٹری پی ایچ ای روشن شیخ کو ہدایات دی کہ وہ اس سلسلے میں تمام منصوبوں پر کڑی نگاہ رکھیں اور ایک ہفتہ میں تمام رپورٹ مرتب کریں۔ صوبائی وزیر سعید غنی نے کہا کہ وہ آئندہ 10 روز کے بعد دوبارہ ان علاقوں اور ان تمام اسکیموں کا دورہ کریں گے اور تمام خامیوں جن کی نشاندہی کی گئی تھی ان کا سدباب ہوتا دیکھیں گے۔ قبل ازیں صوبائی وزیر بلدیات و پبلک ہیلتھ انجنئیرنگ سعید غنی اتوار اور پیر کی درمیانی شب اپنے سندھ کے دو روزہ دورے کے بعد کراچی پہنچے، اپنے دو روزہ سندھ کے دورے کے دوران صوبائی وزیر نے سکھر، لاڑکانہ، نوابشاہ، تھرپارکر، مٹھی عمر کوٹ سمیت دیگر کئی اضلاع کا دورہ کیا اور اس دوران انہوں نے تمام جاری منصوبوں کا جائزہ لیا۔ صوبائی وزیر نے تھر میں بھارتی بارڈر کے نزدیک ایک گاؤں میں سولر ثمرسیل پمپنگ اسٹیشن کی افتتاحی تقریب میں شرکت کی۔

 اس تقریب میں رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر مہیش ملہانی، رکن سندھ اسمبلی فقیر محمد لالیانی، سابق رکن سندھ اسمبلی دوست علی راہیموں،ڈسٹرکٹ چیئرمین غلام حیدر سمیجو، عاجز دھامڑہ، سیکرٹری پی ایچ ای روشن علی شیخ، صوبائی وزیر کے فوکل پرسن رحمت اللہ شیخ، احمد رضا خان سمیت دیگر نے شرکت کی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر سعید غنی نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی نے تھر کی عوام سے آج تک جو جو بھی وعدے کئے ہیں ان کو پورا کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تھرپارکر کے عوام نے پاکستان پیپلز پارٹی پر اعتماد کیا اور ہم نے ان کے اس اعتماد کو عملی جامہ پہنایا ہے۔ سعید غنی نے کہا کہ تھر کے عوام کے نام پر سیاست کرنے والوں کو پہلے بھی یہاں کی عوام نے مسترد کیا تھا اور اب بھی مسترد کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تھرپارکر کے تمام ڈسٹرکٹ میں پیپلز پارٹی کے موجودہ اور گذشتہ 5 سال کے دوران جو ترقی ہوئی ہے اس کی مثال تاریخ میں ن ہیں ملتی۔ انہوں نے کہا کہ تھرپارکر کے عوام کے لئے پینے کا صاف پانی، صحت، تعلیم، روزگار سمیت تمام شعبوں میں پیپلز پارٹی کی حکومت نے جو کام کئے ہیں وہ سب کے سامنے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ یہاں کے عوام پاکستان پیپلز پارٹی پر مکمل اعتماد کرتے ہیں۔


انہوں نے کہا کہ عوام کو تبدیلی اور نیا پاکستان کا جھانسہ دینے والوں نے کس مقام پر لاکھڑا کیا ہے وہ اب سب بخوبی جان چکیں ہیں۔ سعید غنی نے کہا کہ تبدیلی کا نعرہ لگانے والے یوٹرن نیازی اور ان کی ٹیم نے اس ملک میں مہنگائی کا جو سونامی لاکھڑا کردیا ہے اس نے عوام کی زندگی کو اجیرن کردیا ہے۔ سعید غنی نے کہا کہ ہم نے پہلے بھی کہا تھا اور آج بھی کہتے ہیں کہ اگر کوئی اس ملک کو جمہوری، معاشی اور عوام کی منشا کے مطابق چلا سکتی ہے تو وہ صرف اور صرف پاکستان پیپلز پارٹی ہی ہے اور انشاء اللہ وہ وقت دور نہیں جب ہمارے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری اس ملک کے وزیر اعظم کی حیثیت سے اس ملک کا نظم و نصب چلائیں گے اور عوام کی امیدوں کو پورا کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں