نیب بمقابلہ فریال تالپور

آصف زرداری کا نام لئے بغیر پوچھے گئے سوالات کی تفصیل

قومی احتساب بیورو کی جانب سے سابق صدر آصف علی زرداری کی ہمشیرہ اور پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما سندھ اسمبلی کی رکن فریال تالپور کی نیب راولپنڈی میں پیشی کے بعد سیاسی حلقوں میں یہ بحث شروع ہوچکی ہے کہ نیب نے فریال تالپور سے کیا کیا سوالات پوچھے اور اس میں سابق صدر آصف علی زرداری کا کتنا ذکررہا۔ نیب نے سابق صدر آصف علی زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور کو جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں نیب آفس راولپنڈی طلب کیا تھا جہاں ان سے بعض سوالات پوچھے گئے اور اس کے بعد سوال نامہ پر جواب جمع کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے 2 مئی تک کا وقت دیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق فریال تالپور سے سوال کیا گیا کہ زرداری گروپ آف کمپنیز کے اکاؤنٹ اور چار جعلی بینک اکاؤنٹس کے درمیان ٹرانزیکشنز کس کے کہنے پر ہوئی؟ سندھ اسمبلی کی رکن فریال تالپور سے مزید پوچھا گیا کہ کیا آپ کو پتا تھا کہ یہ چار بینک اکاؤنٹس جعلی ہیں؟ سابق صدر آصف علی زرداری کی بہن اور پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما فریال تالپور سے یہ سوال بھی کیا گیا کہ مشتاق احمد آپ کا خاندانی ڈرائیور تھا جس نے 8 ارب روپے کی ٹرانزیکشن کی؟ نیب نے فریال تالپور کو سوال نامے کے جواب دو میں دہ کی جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔ دوسری جانب پاکستان پیپلز پارٹی کہ ملک اور بیرون ملک رہنماؤں اور عہدیداروں نے فریال تالپور کی نیب میں پیشی کے حوالے سے اپنے خدشات کا اظہار کرنا شروع کر دیا ہے جبکہ قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ نیب نے ایک قانونی طریقہ کار کے تحت سوالات پوچھے ہیں اور ان کی طلبی کے نوٹس جاری کیے ہیں اس لیے جواب بھی قانونی طریقہ کار اور قانونی دائرے کے اندر رہ کر دینا ہوگا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

Website Protected by Spam Master