اومنی گروپ کے خلاف تحقیقات ۔ انور مجید کے خاندان کی دو خواتین کو بیرون ملک سفر کی اجازت مل گئی

شریف خاندان کے بعد انور مجید کے خاندان کو بھی عدالتی ریلیف ملنا شروع ہو گیا ۔ اومنی گروپ کے خلاف جعلی بینک اکاؤنٹس کے حوالے سے تحقیقات ہورہی ہے اومنی گروپ کے سربراہ انور مجید اور ان کے صاحبزادے مشکلات میں ہیں خاندان کی خواتین پر بھی بیرون ملک سفر کی پابندی عائد کی گئی تھی. جسے عدالت میں چیلنج کیا گیا. اسلام آباد ہائی کورٹ نے اومنی گروپ کے خاندان کی خواتین کے بیرون ملک سفر پر پابندی کے خلاف درخواستوں کی سماعت کی. یہ درخواستیں نور نمر مجید اور سارا ترین مجید کی جانب سے دائر کی گئی تھیں. عدالت نے وزارت داخلہ کو دونوں خواتین کے بیرون ملک سفر کی پابندیاں ہٹانے کا حکم دیا تھا اور عدالتی حکم کی تعمیل نہ ہونے پر وزارت داخلہ اور وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے کے حکام کو عدالت میں طلب کیا گیا تھا اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق کی عدالت میں درخواستوں کی سماعت ہوئی ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے نے عدالت کو بتایا کہ دونوں درخواست گزاران کے نام عبوری قومی شناختی فہرست میں درج تھے لیکن اب عدالتی حکم کی روشنی میں ان کے نام سے رشتے ہٹا دیے گئے ہیں اس وقت درخواست گزاران پر کوئی پابندی عائد نہیں ہے اور وہ بیرون ملک سفر کرسکتی ہیں عدالت نے درخواست نمٹا دی۔ نور نمرمجید کو کراچی ایئرپورٹ پر ملک سے جانے سے روکنے کے بعد پابندی ہٹانے کے لئے اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کیا گیا تھا ان کے وکیل راجہ رضوان عباس کا کہنا تھا کہ ایف آئی اے حکام نے نور نمر مجید کو جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر بورڈنگ سے روک دیا تھا بتایا تھا کہ اہل خانہ کے منی لانڈرنگ کیس میں ملوث ہونے کی وجہ سے انہیں بیرون ملک سفر کی اجازت نہیں ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

Website Protected by Spam Master