40

کینیڈا کے اعزازی قونصل جنرل بہرام ڈی آواری سفارتی حلقوں کی انتہائی مقبول اور قابل احترام شخصیت ہیں

کینیڈا اور پاکستان کے درمیان دوستانہ اور مضبوط تعلقات ہیں کینیڈا میں پاکستانیوں کی بہت بڑی تعداد آباد ہے جو کینیڈا کے مختلف شعبوں میں ہونے والی ترقی اور خدمات کے شعبے میں اپنا بھرپور کردار ادا کر رہی ہے دونوں ملکوں کے مابین اچھے تجارتی اور سفارتی تعلقات ہیں کینیڈا نے بھی زلزلے اور سیلاب سمیت مختلف ناگہانی آفات کے مواقع پر پاکستانی عوام کی بھر پور مدد کی ہے اور پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کے لیے مختلف شعبوں اور مختلف علاقوں میں مثالی پروگرام شروع کر رکھے ہیں۔


پاکستان کے سب سے بڑے تجارتی اور کاروباری شہر کراچی میں کینیڈا کے اعزازی قونصل جنرل مشہور بزنس مین اور چیمپین سپورٹس مین مسٹر بہرام ڈی آواری ہیں جنہیں سفارتی حلقوں کی انتہائی مقبول اور قابل احترام شخصیت مانا جاتا ہے وہ کینیڈا کے لیے اعزازی قونصل جنرل بننے کے پہلے دن سے لے کر آج تک نہایت سرگرم متحرک اور فعال رہے ہیں اور دونوں ملکوں کے تعلقات کے استحکام اور فروغ کے لیے ان کی کوششیں اور خدمات مثالی رہی ہیں۔
مسٹر بہرام ڈی آواری پارسی برادری سے تعلق رکھتے ہیں ان کے والد نے پاکستان میں ہوٹلنگ بزنس انہیں ورثے میں دیا جسے وہ نہایت کامیابی اور عمدگی سے لے کر آگے بڑھے۔ آواری ہوٹل اور بیچ لگژری ہوٹل ان کے خاندان کی پہچان ہیں اب ان کے دونوں صاحبزادے بھی ان کے ساتھ کاروبار میں ہاتھ بٹاتے ہیں ان کا کاروبار پاکستان کے مختلف شہروں کے ساتھ ساتھ دبئی اور کینیڈا میں بھی پھیلا ہوا ہے۔
بہرام ڈی آواری اور ان کی اہلیہ گوسپی کے دو بیٹے اور ایک بیٹی ہے بہرام ڈی آواری انیس سو بیالیس میں پیدا ہوئے انہوں نے کشتی رانی میں انیس سو اٹھتر کی ایشین گیمز بینکاک میں اور پھر 1982 کی ایشین گیمز دہلی میں اپنی اہلیہ کے ہمراہ گولڈ میڈل پاکستان کے لئے جیتا اور پاکستان کا سبز ہلالی پرچم سربلند رکھا جبکہ انیس سو اٹھتر میں کینیڈا میں انٹرپرائز ورلڈ چیمپئن شپ میں انہوں نے سلور میڈل حاصل کیا ۔بہرام ڈی آواری کینیڈا کے قومی دن کے موقع پر اور پاکستان میں کینیڈا کے سفیر کی تقرری سے کراچی آمد پر مختلف تقاریب منعقد کرتے ہیں ان کے پروگرام اور تقریبات اپنی مثال آپ ہوتے ہیں اور پاکستان کے سفارتی حلقوں میں ان کی بے پناہ عزت اور احترام ہے۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں