55

چین کی حکومت نے چینی لڑکوں کی پاکستانی لڑکیوں سے جعلی شادی اور چین سمگل کرنے کا نوٹس لے لیا

پاکستان سے بھولی بھالی اور معصوم لڑکیوں کو شادی کے نام پر چین اسمگل کرنے اور وہاں ان سے جسم فروشی کرانے کے بعد ان کے انسانی اعضاء بیچنے کی شکایات پر چین کی حکومت نے نوٹس لے لیا ہے ۔اے آر وائی کے پروگرام سرعام کی ٹیم نے اقرارالحسن کی سربراہی میں یہ انکشاف کیا تھا کے پاکستانی لڑکیوں کو شادی کر کے چین چین اسمگل کیا جاتا ہے

اقرارالحسن کی ٹیم نے چھاپہ مار کر ایسی لڑکیاں بھی برآمد کی تھیں جن کی عمر 13 سال تھی اور جن لوگوں سے شادی کرائی جارہی تھی ان چینی باشندوں کو کلمہ بھی نہیں آتا تھا یعنی وہ شادیاں بھی جعلی کرائی جارہی تھی اور جن چینی باشندوں کو مسلمان ظاہر کیا جا رہا تھا ان کو مسلمان ہونے کے جعلی سرٹیفکیٹ بھی بنا کر دیے جاتے تھے اس انکشاف کے بعد ساری معلومات اور شکایات چینی سفارت خانے کو بھی بھیجی گئی اور اب خود اقرار الحسن نے ہی اپنے سوشل میڈیا پیغام کے ذریعے یہ اعلان کیا ہے کہ چین کی حکومت نے اس واقعہ کا نوٹس لے لیا ہے۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں