معیار پر پورا اترنے والے ماڈل اور ہائی اسکولوں کو ہائر سیکنڈری اسکول کا درجہ دینے کا فیصلہ۔ وزیراعلیٰ بلوچستان

کوئٹہ ۔ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی زیرصدارت منعقد ہونے والے ترقیاتی امور کے اعلیٰ سطحی جائزہ اجلاس میں معیار پر پورا اترنے والے ماڈل اور ہائی اسکولوں کو ہائر سیکنڈری اسکول کا درجہ دینے کا فیصلہ کرتے ہوئے محکمہ ہائر ایجوکیشن کو اس ضمن میں نوٹیفکیشن کے اجراء کی ہدایت کی گئی ہے، واضح رہے کہ تعلیم کے شعبہ میں وزیراعلیٰ انیشیٹیو کے تحت ہر ضلع میں سہولتوں کی فراہمی کے ذریعہ ایک ہائی اسکول کو ماڈل اسکول کا درجہ دینے کی پالیسی پر عملدرآمد کیا جارہا ہے، حکومت کے اس فیصلے کے تحت میٹرک پاس کرنے والے طلباء کو کالج کی سہولت بھی ملے گی۔ اجلاس میں حالیہ بارشوں سے ڈیموں میں پانی کی وافر دستیابی سے بھرپور استفادہ کے لئے محکمہ زراعت کو میرانی ودیگر ڈیموں اور کچھی کینال کے کمانڈ کو ایریا ترقی دینے کے منصوبے پر عملدرآمد تیز کرنے کی ہدایت بھی کی گئی ہے جبکہ محکمہ جنگلات کو مختلف علاقوں کی موزیت کے مطابق فضائی ذریعہ سے درختوں اور پودوں کے بیج پھینکنے کی ہدایت کی گئی ہے، وزیراعلیٰ بلوچستان نے ایریگیشن اور پبلک ہیلتھ کے محکموں کو ڈیموں کی نگرانی کرنے اور بارشوں اور سیلابی پانی کا ڈیٹا اکٹھاکرکے موزوں مقامات پر ڈیموں کی تعمیر کے منصوبوں کی فزیبلیٹی کی رپورٹ کی تیاری کی ہدایت کی۔ اجلاس میں تعلیمی شعبہ میں وزیراعلیٰ انیشیٹیو پروگرام کی پیشرفت کا جائزہ لیا گیا اجلاس کو بتایا گیا کہ شیلٹر لیس اسکولوں کی تعمیرومرمت اور ضروری سہولتوں کی فراہمی کے منصوبوں کے ٹینڈر جاری کردیئے گئے ہیں جبکہ پرائمری، مڈل،ہائی / ماڈل اسکولوں کے منصوبوں کی پی ڈی ڈبلیو ڈی کرکے آئندہ ہفتے ٹینڈروں کا اجراء کردیا جائے گا، اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ مختلف شعبوں کے جاری منصوبوں کے لئے مطلوبہ فنڈ ز کا اجراء جاری ہے جبکہ تعلیم، صحت، آبپاشی اور آبنوشی کے شعبوں کے نئے ترقیاتی منصوبوں کے ٹینڈرز بھی جاری کئے جارہے ہیں، منصوبوں کی شفافیت، بروقت تکمیل اور آغاز کی نگرانی کے لئے صوبائی سطح پر ایڈیشنل چیف سیکریٹری منصوبہ بندی وترقیات اور متعلقہ محکمے کے سیکریٹری جبکہ ڈویژنل سطح پر کمشنر کی زیرنگرانی کمیٹیاں قائم کردی گئی ہیں۔ وزیراعلیٰ بلوچستان نے تمام ترقیاتی محکموں کو جاری منصوبوں کی بروقت تکمیل اور متعلقہ محکموں کو نئے منصوبوں کی ابتدائی کاروائی فوری طور پر مکمل کرکے ٹینڈرز کے اجراء کی ہدایت کی جبکہ انہوں نے محکمہ منصوبہ بندی وترقیات اور محکمہ خزانہ کو منظور شدہ منصوبوں کی اتھرائزیشن اور فنڈز کے بروقت اجراء کو یقینی بنانے کی بھی ہدایت کی۔ صوبائی وزراء میر ظہور بلیدی، سردار عبدالرحمن کھیتران، سلیم احمد کھوسہ، عبدالخالق ہزارہ، دنیش کمار، رکن صوبائی اسمبلی عبدالرشید بلوچ، چیف سیکریٹری بلوچستان اختر نذیر، ایڈیشنل چیف سیکریٹری منصوبہ بندی وترقیات اور متعلقہ محکموں کے سیکریٹری اور دیگر حکام اجلاس میں شریک تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں