بلوچستان کے دو سابق وزرائے اعلیٰ کی اہم مشاورت

دو سابق وزراء اعلیٰ اور سینئر سیاستدانوں میں مشاورت کی ہے۔ سابق وزیراعلیٰ عبدالمالک اور سابق وزیراعلیٰ رئیسانی کے درمیان موجودہ سیاسی صورتحال اور صوبے کے سیاسی مستقبل کے حوالے سے اہم مشاورت ہوئی ہے جیسے سیاسی حلقوں میں بڑی اہمیت کی نظر سے دیکھا جا رہا ہے اسے موجودہ وزیر اعلی جام کمال کی حکومت کے لیے نیا چیلنج بھی قرار دیا جا رہا ہے بلوچستان کی مختلف سیاسی اور قوم پرست پارٹیاں مستقبل کی سیاسی حکمت عملی وضع کرنے کے لئے مشاورتی عمل کو آگے بڑھا رہی ہیں۔ بلوچستان کی حکومت میں شامل جماعتوں اور سیاسی شخصیات کے مابین اختلافات کوئی ڈھکی چھپی بات نہیں ہے زیادہ تر شخصیات نے سیاسی مفادات کے لیے جام کمال کی حکومت کی حمایت کا اعلان کررکھا ہے لیکن ان کے علاقوں اور ان کے قبیلوں میں مسائل بھی ہیں اور وسائل کی کمی بھی ہے جس کی وجہ سے ان کے ووٹرز ر عوام میں تحفظات پائے جاتے ہیں اور صوبائی حکومت کے خلاف سیاسی محاذ گرم ہو سکتا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں