33

بھارتی میڈیا اورجھوٹ کی شکست

خبر ہونے تک
(رفیق شیخ)

مہذب اور جمہوری ممالک میں انتخابات ایک جامع انتخابی پروگرام کی بنیاد پر لڑے جاتے ہیں جن میں ملک کو ترقی دینے اور قوم کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں دینے کے دعوے کیے جاتے ہیں لیکن بھارت ایک ایسا ملک ہے جہاں لوگوں کے خون پر انتخابات جیتنے کی کوشش کی جاتی ہے بھارتی جنتا پارٹی اس سوچ کے ساتھ سیاسی جماعتوں میں سرفہرست ہے تو نریندر مودی اس سوچ کے سب سے بڑے لیڈر ہیں بھارت میں مسلمانوں کا خون بہا کر وہ اقتدار حاصل کرتے ہیں اب پھر انتخابات کو وقت ہے تو ایک قدم آگے بڑھ کر اس نے پاکستان کو نشانہ بنانے کی غلطی کی ہے پاکستان پر حملہ کرکے وہ بھارتی عوام کے سامنے ہیرو بننا چاہتا تھا تاکہ مئی میں ہونے والے انتخابات میں ہندو عوام کا جزباتی ووٹ حاصل کرسکے اس کی اس کوشش میں بھارتی میڈیا کا ایک بڑا حصہ بھی اس کے شانہ بشانہ ہے لیکن جو کچھ ہوا اس نے مودی اور کی ہمنوا میڈیا کی سوچ کے پرخچے اڑادئے آج خود بھارت کے اندر سے آواز اٹھ رہی ہے کہ عوام کو حقائق بتائیں جائیں کے پاکستان پر حملہ کیوں کیاگیا اور اس کا کیا نتیجہ نکلا،پاکستان نے گرفتار اسکواڈرن لیڈر ابھی نندن کوغیر مشروط رہا کرکے دنیا کو ہیغام دیا کہ پاکستان جنگ نہیں چاہتا اس پر جنگ مسلط کی جارہی ہے لیکن بھارتی میڈیا نے اسے بھی اپنی جیت قرار دیا مسلسل پروپیگنڈہ کیا کہ پاکستان نے ڈر کر پائلٹ کو رہا کیا ہے،اس کے استقبال کو ڈرامہ ٹائز کیا واہگہ بارڈر سے گھنٹوں مسلسل براہ راست کوریج کی ابھی نندن کو ہیرو بناکر پیش کیا لیکن بھارت پہنچنے کے ساتھ ہی بھارتی حکومت نے اپنے پائلٹ کے ساتھ جو قیدیوں جیسا سلوک کیا اس پر بھارتی میڈیا کی آنکھیں کھلی نہیں پھٹ گئی ہیں،ابھی نندن کو بھارتی میڈیا ہیرو بنانے پر تلا ہوا تھا وہ یہ بھول گیا کہ ابھی نندن ایک جنگی قیدی کی حیثیت سے واپس آرہا تھا ایسے جوانوں کو ان کے اپنے ملک میں شک کی نظر سے دیکھا جاتا ہے اس کی حیثیت اور مقام وہ نہیں رہتا جو اس کی گرفتاری سے قبل تھا لہٰزادھوپ میں پکوڑے تلنے کی بھارتی میڈیا کی کوشش کا جو انجام ہونا تھا وہ ہی ہوا ایک جانب عالمی سطح پر بھارت کے پاس کہنے کو کچھ نہیں تو دوسری جانب بھارت کے اندر اپوزیشن ہی نہیں خود حکومتی حلقے ، سول سوسائیٹی ، بھارت کا غیرجانبدار میڈیا اور حقیقت پسند صحافی بھی بھارتی حکومت سے اس کے دعووں کے ثبوت مانگ رہے ہیں اور مودی سرکار جواب دینے کے بجائے اسے ملک کاکوئی بڑا سیکریٹ گردانتے ہوئے اپوزیشن سے کہہ رہی ہے کہ ملک میں مفاد میں ایسے سوالات نہ کیے جائیں مودی نواز بھارتی میڈیا مسلسل مودی کی ہاں میں ہاں ملارہا ہے اور بھارتی قوم کو ان حقائق سے لاعلم رکھ رہا ہے جن کا جاننا عوام کا حق ہے اور یہ بتانا میڈیا کا فرض ہے بھارتی جنتا پارٹی کے پاس اپنی عوام کو متاثر کرنے والا کوئی پروگرام نہیں ہے اس کے پاس مسلم اور پاکستان دشمنی ایک ہی ایجنڈا ہے جس پرمودی سرکار کی ساری انتخابی مہم کھڑی ہے لہٰزا نریندر مودی اور اس کا ہمنوا میڈیا اپنے ملک اورعوام کی پرواہ کیے بغیرانتخابات تک ابھی اور بلینڈر کرے گا اور اس کا خمیازہ بھگتے گا۔ بھارتی عوام کی سوچ بدل رہی ہے اب کی بار،نومودی سرکار ۔اب کی بار امن کی سرکارنعرہ کامیاب ہوگا۔

Email……rshaikh46@hotmail.com

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں